کونسی لڑکی زیادہ مزہ دیتی ہے موٹی​.پتلی یا

which type girls give you more satisfictions with videos

خوبصورت عورت کو بے وقوف بنانا ہوا کتنا آسان

کامسوترا میں متعدد جنسی پوزیشنیں جانوروں کی بادشاہی سے متاثر ہوتی ہیں۔ سیکس پوزیشنز، جیسے کتے کا انداز، کووں کی کانگریس، ازگر کی محبت، وغیرہ، مختلف جانوروں کے کوٹل کی نقل ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر مرد غالب اور پیچھے داخلے کی پوزیشنیں ہیں اور ان میں سب سے مشہور ڈوگی اسٹائل پوزیشن ہے۔ محبت سازی کی فین پوزیشن ڈوگی اسٹائل پوزیشن کی ایک قسم ہے۔ اس پوزیشن میں، خاتون پارٹنر مرد پارٹنر کے ساتھ اپنی پیٹھ کے ساتھ کھڑی ہوتی ہے جب کہ اپنے بازو کرسی کی پشت یا صوفے کے کندھوں پر رکھ کر آرام کرتی ہے۔ مرد ساتھی خاتون پارٹنر کے پیچھے سیدھی پوزیشن میں کھڑا ہوتا ہے، اس کے کولہوں کو پکڑ کر اعتماد شروع کرتا ہے۔ مرد ساتھی بھی اس کی کمر پکڑ کر اسے آگے پیچھے کر سکتا ہے۔ اس کے علاوہ، وہ خاتون ساتھی کی طرف جھک سکتا ہے اور اس اضافی محرک اور حوصلہ افزائی کے لیے اس کی چھاتیوں کو پکڑنے کے لیے اس کے جسم کو پکڑ سکتا ہے۔ خاتون پارٹنر بھی اس پوزیشن میں آرام دہ ہے، کیونکہ وہ اپنے پیروں پر کھڑی ہے اور اپنے آپ کو اسٹول کی پشت یا کرسی/صوفے کے بازوؤں سے آرام کر رہی ہے۔

بوڑھی عورتیں، مرد بوڑھی عورتوں کو کیوں ترجیح دیتے ہیں؟ میاں بیوی کی عمروں میں فرق، خاص طور پر اگر شوہر چھوٹا ہو اور بیوی بڑی ہو، بعض اوقات یہ مسئلہ جھگڑے کی شکل اختیار کر لیتا ہے۔ ماہرین نفسیات اور سماجیات کے ماہرین کے ساتھ ساتھ ایسے ادارے جو میاں بیوی کے مستقبل اور محبت کے انسانی جذبات کی نگرانی کرتے ہیں۔
میاں بیوی کے درمیان عمر کے فرق کے مثبت اور منفی اثرات بھی زیر بحث آئے ہیں۔ حال ہی میں ویب سائٹ ‘میل آن لائن’ نے ایک رپورٹ شائع کی تھی جس میں میاں بیوی کے درمیان عمر کے غیر معمولی فرق اور دونوں کی زندگیوں پر اس کے مثبت اور منفی اثرات پر بات کی گئی تھی۔ اس بحث کا آغاز فرانسیسی صدارتی امیدوار 39 سالہ ایمانوئل میکرون اور ان کی اہلیہ 64 سالہ بریگزٹ ٹیرگنوکس سے ہوا۔ دونوں کے درمیان دو دہائیوں سے زیادہ کا فرق ہے۔ ڈیلی میل کے ایڈیٹر جیمز اینس اسمتھ نے بڑی عمر کی خواتین کے خلاف تعصب کا اپنا ذاتی تجربہ شیئر کیا۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ فرانسیسی صدارتی امیدوار کے ساتھ بڑی عمر کی خاتون کے ساتھ تعلقات میں کافی مماثلت رکھتے ہیں۔ پندرہ سال کی عمر میں ان کی عمر 20 سال تھی۔
مجھے ایک 35 سالہ عورت سے پیار ہو گیا۔ ان کا کہنا ہے کہ بڑی عمر کی خواتین اور کم عمر مردوں کی شادیوں کے بارے میں بھی کئی تحقیقات سامنے آئی ہیں۔ 1980 کے بعد، بوڑھی خواتین کی طرف نوجوان مردوں کے رجحان میں اضافہ ہوا۔ ایک اور مثال بڑی عمر کی خواتین کے لیے اسمتھ اور میکرون کے رجحان کے درمیان نمایاں مماثلت ہے۔ اسمتھ کو 15 سال کی عمر میں ایک 50 سالہ خاتون سے پیار ہو گیا تھا، لیکن ایمینوئل میکرون کا اس سے 25 سال بڑی خاتون کے ساتھ طویل مدتی تعلق تھا۔ دونوں اب بھی کامیاب ازدواجی زندگی گزار رہے ہیں۔ ’ڈیلی میل‘ کے ایڈیٹر جیمز اسمتھ کا کہنا ہے کہ ان کی بڑی عمر کی خواتین کو ترجیح دینے کی وجہ معلوم نہیں ہے، لیکن ایک امکان یہ ہے کہ وہ گھر میں دو بڑی بہنوں کے بعد پیدا ہوئے ہیں۔
اسے گھر میں بھی بڑی عمر کی عورتوں کو لاڈ کرنا پڑتا تھا۔ پھر اس کی پرورش علاقے کی ‘بالغ’ خواتین کے سائے میں ہوئی۔ یہی وجہ ہے کہ وہ قدرتی طور پر بڑی عمر کی خواتین کی طرف راغب ہوتا ہے۔ جیمز سمتھ کا کہنا ہے کہ وہ کبھی کبھی ‘جوڈتھ’ [محبوب] کو سروگیٹ ماں کے طور پر سوچتے تھے، لیکن ساتھ ہی جوڈتھ کے لیے ایک خاص کشش بھی محسوس کرتے تھے۔ چنانچہ وہ آدھی رات کو اس کے بیڈ روم کے دروازے کے نیچے سے اسے محبت کے پیغامات بھیجتا تھا۔ جیمز اسمتھ کا کہنا ہے کہ بڑی عمر کی خواتین کی طرف ان کی کشش صرف اسکول کے دنوں تک ہی محدود نہیں تھی بلکہ اس کے بعد بھی بڑی عمر کی خواتین کی طرف راغب رہا۔ وہ 26 سال کے تھے جب انہیں ایک 38 سالہ ٹی وی پروڈیوسر سے پیار ہو گیا جو ان سے 12 سال بڑا تھا۔
یہ اس کی محبت کی دوڑ میں ایک نیا موڑ تھا۔ کیونکہ جیمز سمتھ ایک پڑھے لکھے شخص ہیں۔ اس لیے انہوں نے کم عمر مردوں کی بڑی عمر کی خواتین کی طرف کشش پر بھی تحقیق کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ بعض اوقات عمر کا فرق مسائل کا باعث بنتا ہے اور آپ اس کی وضاحت بھی نہیں کر سکتے۔ بڑی عمر کی خواتین کے فوائد جیمز اسمتھ کا کہنا ہے کہ ‘بالغ’ اور بڑی عمر کی خواتین سے شادی کرنے کے بہت سے فائدے ہیں۔ بوڑھی خواتین، زیادہ سمجھدار اور تجربہ کار ہونے کی وجہ سے، چھوٹے شوہر کے استحکام میں حصہ ڈال سکتی ہیں۔ شریک حیات کے انتخاب میں بڑی عمر کی عورت کا انتخاب کم عمر لڑکی کے انتخاب سے زیادہ فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ اسمتھ کا کہنا ہے کہ بہت سارے لوگ آپ سے پریشان کن سوال پوچھتے ہیں۔
محبوب کی محبت کو کیا ہوا؟ ایسے اور بھی بہت سے سوالات پوچھے جاتے ہیں۔ ایسے افراد خواتین کو سمجھنے اور متوقع تبدیلیوں کو متوازن کرنے سے ناواقف ہوتے ہیں۔ میرے خیال میں بڑی عمر کی خواتین کو شادی کے بعد نوکری یا بینک اکاؤنٹ میں کوئی مسئلہ نہیں ہوتا جبکہ چھوٹی لڑکیوں کو ازدواجی تعلقات کے مختلف مسائل ہوتے ہیں۔ مردوں اور عورتوں کے درمیان عمر کے فرق کا بنیادی اصول پچھلی دہائی کے دوران، یہ تاثر کہ مردوں اور عورتوں کے درمیان عمر کا فرق مردوں کو فائدہ پہنچاتا ہے۔ اس طرح اسے مروجہ معیارات کے تحت ایک فریب سمجھا جاتا ہے۔ تاہم یہ بات مشہور ہے کہ خواتین کم عمر خواتین کو ترجیح دیتی ہیں اور مرد بڑی عمر کی خواتین کو ترجیح دیتے ہیں۔ لیکن 1980 کی دہائی میں اس نے الٹا ہونا شروع کیا۔ آدمی اور عورت
وہ شریک حیات کے انتخاب میں زیادہ حساس ہو گئے ہیں اور ماضی کی روایات اور رجحانات کے برعکس متوازن تعلقات کو اہمیت دیتے ہیں۔ اگر آپ پچھلے بیس سال کے میڈیا پر نظر ڈالیں تو بڑی عمر کی خواتین اکثر کم عمر مردوں کے ساتھ نظر آتی ہیں۔ عمر کی حد میں تھوڑا سا اضافہ بھی مردوں اور عورتوں کو ایک ساتھ زیادہ وقت گزارنے کی اجازت دیتا ہے۔ آنے والے وقتوں میں، لوگ زندگی کے مختلف مراحل میں متنوع رشتوں سے زیادہ مستفید ہوں گے۔ زندگی کے ہر مرحلے پر، خواتین اور مرد ایک دوسرے کے ساتھ ہونے کو مختلف طریقے سے سمجھتے ہیں اور وقت کے ساتھ ساتھ خود کو محفوظ محسوس کرتے ہیں۔ عمر کے عدم توازن کی بھی ان گنت مثالیں موجود ہیں۔ جان کولنز کا پانچواں شوہر ان سے 30 سال بڑا تھا۔

کونسی لڑکی زیادہ مزہ دیتی ہے موٹی​.پتلی یا
5 1 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
PHP Code Snippets Powered By : XYZScripts.com